فرعون کو دریائے نیل میں آخر کیوں ڈبویا گیا ؟ ایک ایسا واقعہ جو آپ کو معلوم نہیں ہوگا

10

ایک مرتبہ حضرتِ سیِّدُنا جبریئلِ امین عَلَیْہ الصَّلوٰۃُ وَالسَّلام فرعون کے پاس ایک اِسْتِفُتاء لائے جس کا مضمون یہ تھا کہ بادشاہ کا کیا حکم ہے ایسے غلام کے بارے میں جس نے اپنے ’’آقا ‘‘کی دولت و نعمت میں پرورِش پائی بھر اُس کی نا شُکری کی اور اُس کی اور اُس کے حق میں نہ صرف مُنِکر(یعنی انکار کرنے والا ہوا) بلکہ خود ’’آقا ‘‘ ہونے کا مُدَّعی (دعویدار) بن گیا۔اِ س پر فرعون نے یہ جواب دیا کہ جو نمک حرام غلام اپنے آقا کی نعمتوں کا انکار کرے اور اُس کے مُقابِل (یعنی مقابلے پر ) آئے،اُس کی سزا یہ ہے کہ اُس کو دریا میں ڈبو دیا جائے۔ چُنانچہ فرعون جب خود دریائے نیل میں ڈوبنے لگا تو حضرتِ سِّیدُنا جِبرئیلِ امین عَلَیْہِ الصَّلوٰ ۃُ وَ السَّلام نے اِس کا وُہی فتویٰ اس کے سامنے کر دیا اور اِس کو اِس نے پہچان لیا۔

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestlinkedintumblrmail

مزید

Doller انوکھا سخی، جسے کوئی نہیں جانتا
Lift سیلفی لینے سے انکار، ایک شخص نے لفٹ میں کیا حرکت کر ڈالی؟
aaa دنیا کے سب سے لمبے ہوائی جہاز کو حادثہ، وجہ کیابنی؟ جانئے
Weight Loss 44کلو وزن کم کیسے کیا ؟ ایسا طریقہ کہ آپ بھی فائدہ اٹھا سکتے ہیں
61 101سالہ ضعیف العمر خاتون نے بچے کو جنم دیا
aaa یورپی یونین کا ایپل کمپنی کو 13 ارب یورو جمع کرانے کا حکم، وجہ کیابنی؟ جانئے