فرعون کو دریائے نیل میں آخر کیوں ڈبویا گیا ؟ ایک ایسا واقعہ جو آپ کو معلوم نہیں ہوگا

10

ایک مرتبہ حضرتِ سیِّدُنا جبریئلِ امین عَلَیْہ الصَّلوٰۃُ وَالسَّلام فرعون کے پاس ایک اِسْتِفُتاء لائے جس کا مضمون یہ تھا کہ بادشاہ کا کیا حکم ہے ایسے غلام کے بارے میں جس نے اپنے ’’آقا ‘‘کی دولت و نعمت میں پرورِش پائی بھر اُس کی نا شُکری کی اور اُس کی اور اُس کے حق میں نہ صرف مُنِکر(یعنی انکار کرنے والا ہوا) بلکہ خود ’’آقا ‘‘ ہونے کا مُدَّعی (دعویدار) بن گیا۔اِ س پر فرعون نے یہ جواب دیا کہ جو نمک حرام غلام اپنے آقا کی نعمتوں کا انکار کرے اور اُس کے مُقابِل (یعنی مقابلے پر ) آئے،اُس کی سزا یہ ہے کہ اُس کو دریا میں ڈبو دیا جائے۔ چُنانچہ فرعون جب خود دریائے نیل میں ڈوبنے لگا تو حضرتِ سِّیدُنا جِبرئیلِ امین عَلَیْہِ الصَّلوٰ ۃُ وَ السَّلام نے اِس کا وُہی فتویٰ اس کے سامنے کر دیا اور اِس کو اِس نے پہچان لیا۔

Facebooktwittergoogle_plusredditpinterestlinkedintumblrmail

مزید

asas پاکستان میں خواجہ سراسے نوجوان کی شادی اور پھر ہنی مون ،ایکساتھ جینے مرنے کی قسمیں کھائیں
sadsa خون کے پیاسوں کو اپنا خون پلانے والی عورت،جانئے وہ باتیں جس کا آپ تصور بھی نہیں کر سکتے
61 101سالہ ضعیف العمر خاتون نے بچے کو جنم دیا
DSADADAS خاتون کی ایسی تصویر فیس بک پر آگئی کہ دیکھتے ہی شوہر نے طلاق دیدی
sasddas بیوی نے اپنی اور شوہر کی ایسی چیز فیس بک پر پوسٹ کر دی کہ شوہر نے قتل کر دیا
14 دس بڑے برفانی تودوں میں سے ایک تودہ ٹوٹ کر الگ ہونے کے قریب